What is Smartphone Ultrasound read in Urdu

کیجیے الٹراساؤنڈ جیب میں رکھے اسمارٹ فون سے


ترجمہ وتدوین سحؔر خان/ سینیئر کنٹینٹ مینیجر/ نیرنگ ٹرانسکرئیشن سروسز


اقباؔل نے تو بہت پہلے کہا تھا یہ کائنات ابھی ناتمام ہے شاید کہ آ رہی ہے دمادم صدائے کن فیکوں مگر آج سائنس ہر روز نت نئی ایجادات کے ذریعے شاید ثابت کرنا چاہ رہی ہے کہ برصغیر کا یہ عظیم فلسفی شاعر صرف اہلِ بصیرت ہی نہیں بلکہ باطنی بصارت سے بھی بہرہ ور تھا۔ ابھی کچھ دن پہلے کی بات ہے جب سائنس نے فاصلوں کو سمیٹنے کےلیے آپ کے ہاتھ میں پہلے ٹیلی فون اور پھر موبائل تھمائے تھے مگر اب اہل علم نے ان سے بھی ایک قدم آگے بڑھ کر ایسی مختصر جسامت کی ’الٹراساؤنڈ‘ مشینیں مناسب تر داموں میں تیار کر لی ہیں جنہیں آپ محض اپنے اسمارٹ فون سے جوڑ کر جسم کے ان رازوں کو دیکھ سکتے ہیں جو سادہ آنکھوں سے آج تک پوشیدہ رہے تھے۔ ان مختصر جسامت کی الٹراساؤنڈ مشینوں کو چلانے کے لیے ایک ایپ تیار کی گئی ہے جو ’عکوسِ باطنی‘ لمحہ بھر میں آپ کی موبائل اسکرین پر ظاہر کر دیتی ہے۔ ’بٹرفلائی آئی کیو‘ نامی یہ ڈیوائس جو اتنی مختصر ہے کہ اسے باآسانی جیب میں رکھا جا سکتا ہے برطانیہ کے اسپتالوں میں نہایت تیزی سے مقبول ہو رہی ہے۔ برطانوی ٹی وی اسکائی نیوز کے مطابق الٹراساؤنڈ کے تناظر میں یہ اپنی نوعیت کی واحد مشین ہے جسے کسی دیگر بیرونی سپورٹ کی ضرورت نہیں کیوں کہ اس میں لگی واحد چپ جسم انسانی کے ہر حصے کی مفصل اسکیننگ کر سکتی ہے۔ بٹرفلائی آئی کیو دکھنے میں ایک برقی شیور کی طرح ہے جس کی مدد سے ڈاکٹروں کو نہایت آسانی سے فوری طور پر درکار طبی معلومات لمحہ بھر میں مل جاتی ہیں۔



Credit – Butterfly – Sky News


اگرچہ اس ڈیوائس کو ابھی نارتھ ہمپٹن جنرل ہاسپٹل میں مزید ٹیسٹ کیا جا رہا ہے مگر ان تجربات کے نگراں ڈاکٹر جانی ولکنسن کا کہنا ہے کہ اس چھوٹے سے آلے میں مسقبل کی جدید ترین طبی ٹیکنالوجی کا عکس صاف جھلک رہا ہے۔ ولکنسن نے اسکائی نیوز کو بتایا کہ اتنا ہی نہیں بلکہ بٹر فلائی آئی کیو کی مدد سے نئے ڈاکٹروں کو نہایت مہارت سے تربیت بھی دی جا سکے گی کیوں کہ ہم انہیں انتہائی پیچیدہ مشینوں کے سامنے کھڑا کرنے سے پہلے اس آلے کے ذریعے بخوبی تیار کر سکتے ہیں اور یہ ہی مسقبل میں طبی تعلیم دیے جانے کا طریقہ ہو گا۔ ولکنسن کے مطابق اگرچہ اس سے پہلے بھی کافی چھوٹے سائز میں الٹرساؤنڈ مشینیں تیار کی جا چکی ہیں مگر پیچیدگی اور قیمت کے اعتبار سے ان کا بٹرفلائی آئی کیو سے کوئی مقابلہ نہیں کیا جا سکتا۔ ٹی وی رپورٹ کے مطابق اس اسکینر کو برطانیہ کے ہسپتالوں اور میڈیکل کالجوں میں تیزی سے مقبولیت حاصل ہو رہی ہے جب کہ مائکروسوفٹ کے بانی بل گیٹس نے بٹرفلائی آئی کیو کو سستے داموں کینیا اور یوگنڈا میں متعارف کرنے کےلیے تیار کنندہ کمپنی میں بڑے پیمانے پر سرمایہ کاری کر رکھی ہے۔ بٹرفلائی کمپنی کے چیف میڈیکل آفیسر جان مارٹن نے بتایا کہ اس ڈیوائس کی تیاری کے وقت ہمارے ذہن میں صرف یہ بات تھی کہ یہ مشین استعمال میں اتنی سادہ ہونی چاہیے کہ اسے صرف ماہرین ہی نہیں بلکہ گھروں میں عام آدمی بھی بہ سہولت استعمال کر سکے۔ ’چناں چہ آج آپ بٹرفلائی آئی الٹرساؤنڈ سے اپنے گھر بیٹھے جسم کی اندرونی حصوں کی تصویر لے کر اسی وقت اپنے ڈاکٹر کو برقی ارسال کر سکتے ہیں۔‘ ڈاکٹر ولکنسن کے مطابق اس طریقے سے نہ صرف مریض اور معالج کے وقت کی بچت ہو گی بلکہ اس ایجاد سے مشرق و مغرب یکساں مستفیض ہو سکتے ہیں۔