Foxes Spotted In Jerusalem Is End Times Prophecy Read In Urdu

’ہیکل سلیمانی میں لومڑیاں آنے کی پیشین گوئی‘

مقبوضہ بیت المقدس میں مسجد اقصٰی کے صحن میں مغربی دیوار کے پاس متعدد لومڑیوں کو دیکھا گیا ہے جس کے بعد یہودیوں کا ماننا ہے کہ یہ امر ان کی مقدس مذہبی کتابوں میں درج ہزاروں سال قدیم اُس پیش گوئی کے پورا ہونے کی علامت ہے جس میں یہودی، عیسائی اور مسلمانوں تینوں کے نزدیک مقدس اس تاریخی شہر کو ایک بار پھر عروج حاصل ہونے کا وعدہ کیا گیا تھا۔ موقر مغربی اور اسرائیلی ذرائع ابلاغ کے مطابق اسرائیل کے ایک ممتاز یہودی عالم ربی شموئیل رابینو وتس نے ان لومڑیوں کی تصاویر شیئر کی ہیں جن میں انہیں مقبوضہ بیت المقدس میں مسجد اقصٰی کے صحن ’حرم القدس شریف‘ میں مغربی دیوار کے پاس چلتے پھرتے دیکھا جا سکتا ہے۔ ربی شموئیل مقبوضہ شہر میں ہیکل سلیمانی کی مغربی دیوار اور دیگر مقدس مقامات کے نگران ہیں جب کہ آج بروز 10 اگست یہودی ’تشا باؤ‘ نامی اپنا مذہبی تہوار منانے کی تیاریاں بھی کر رہے ہیں۔

Credit — Nowtheendbegins

مگر حیرت انگیز امر یہ ہے کہ یہودی علماء اپنے مقدس کتابوں میں درج اس پیش گوئی کی مبینہ طور پر پوری ہونے والی اس علامت پر خوشی کے بجائے حد سے زیادہ پریشان اور افسردہ ہیں کیوں کہ اگرچہ یہودی روایات کے مطابق اس مقام پر لومڑیاں نظر آنے کے بعد ہی ہیکل سلیمانی کی از سر نو تعمیر کا کام شروع کیا جائے گا مگر ان روایات میں اس بات کی کوئی وضاحت نہیں کہ مسقبل میں کون سے مذہب سے تعلق رکھنے والے لوگ یہ مقدس فریضہ انجام دیں گے۔ چناں دوسرے تناظر میں یہ علامت بیت المقدس سے جارحانہ یہودی تسلط کے خاتمے کا بھی اشارہ ہو سکتی ہے کیوں کہ یہودیوں سے آزادی اور اسرائیل کے خاتمے کے بعد دنیا کا ہر مسلمان مسجد اقصٰی کی تعمیر نو کے لیے خوشی سے اپنا تن، من اور دھن پیش کرنے میں اپنے بھائیوں سے بازی لے جانے کی کوشش کرے گا۔ برطانوی اخبار ڈیلی میل، اسرائیلی اخبار یروشلم پوسٹ کے حوالے سے لکھتا ہے کہ ربی شموئیل نے اس سلسلے میں کتاب گریہ کے پانچویں باب سے اٹھارویں سطر کا حوالہ دیا ہے۔


ہیکل سلیمانی تباہ ہو جائے گا اور یہاں لومڑیاں بسیرا کریں گی – کتاب گریہ/ 18/5


 کتاب گریہ یہودوں کی مقدس کتاب ہے جس میں ان کی بربادیوں کی داستانوں کے ساتھ یروشلم میں ان کی دو عبادت گاہوں کی تباہی کا بھی تذکرہ ہے جن میں سے پہلی عبادت گاہ کو اہل بابل اور دوسری کو رومیوں نے تخت و تاراج کیا تھا۔ کتاب کے اس باب میں تورات کی ایک مقدس ہستی اوریا کے الفاظ نقل ہیں جن میں کہا گیا ہے کہ ہیکل سلیمانی تباہ ہو جائے گا اور یہاں لومڑیاں بسیرا کریں گی۔ ماہرین کے مطابق اگر یہ پیش گوئی درست ہے تو پھر یہ یہودیوں کی ایک اور مقدس کتاب تالمود میں حضرت ذکریاؑ کی اس پیش گوئی کی بھی تائید کرے گی جس میں انہوں نے صریح الفاظ میں کہا ہے کہ یہ عبادت گاہ ایک بار پھر تعمیر کی جائے گی۔ ان ہی صفحات میں آگے درج ہے:


جب تک اوریا کی مسجد اقصٰی کی تباہی سے متعلق پیش گوئی پوری نہیں ہوئی مجھے اس بات کا اندیشہ تھا کہ کہیں( حضرت) ذکریاؑ کی – مسجد اقصٰی کی تعمیر نو کی بابت – پیش گوئی پوری نہ ہو کیوں کہ دونوں پیش گوئیاں باہم منسلک ہیں –  عہد مکوت/ چوبیس (ب)


’تیشا باؤ‘ کی رسوم 10 اگست کو ہوتی ہیں جن میں یہودی ہیکل سلیمانی کی اہل بابل اور پھر یونانیوں کے ہاتھوں تباہی کا سوگ مناتے ہیں اور عبادت گاہوں میں کتاب گریہ کو پڑھا جاتا ہے۔ اس دوران دیگر قوموں کے ہاتھوں یہودیوں کی تاریخی بربادیوں پر بھی ماتم کیا جاتا ہے جن میں ہولوکاسٹ بھی شامل ہے۔ خیال رہے کہ مسجد اقصٰی مسلمانوں کے لیے بھی نہایت مقدس ہے کیوں کہ یہ ہی وہ مقام ہے جہاں سے اللہ کے آخری نبی حضرت محمدؐ کو سفر معراج پر لے جایا گیا تھا اور پھر مسلمانوں نے ساتویں صدی میں یروشلم کو فتح کرنے کے بعد اس مقام پر مسجد اقصٰی تعمیر کی تھی۔



دوسری طرف مغربی محققین کا کہنا ہے کہ لفظ لومڑی عہد نامہ قدیم میں آٹھ جب کہ عہد نامہ جدید میں دو مرتبہ استعمال ہوا ہے اور کہیں بھی یہ لفظ زمانہ قربِ قیامت میں ہیکل سلیمانی کی تعمیر نو سے متعلق پیش گوئیوں سے میل نہیں کھاتا اور درج بالا تناظر میں یہودیوں نے براہ راست تورات کا نہیں بلکہ تلمود کا حوالہ دیا ہے جسے وحی الہٰی قرار نہیں دیا جا سکتا؛ تاہم ڈیلی میل کے مطابق حضرت عیسٰیؑ کی دنیا میں واپسی اور آخری جنگ کے واقعات کے تذکرے میں بائبل صریح الفاظ میں اس مقام پر ایک نئی تعمیر شدہ عبادت گاہ کی پیش گوئی کرتی ہے مگر ان پیش گوئیوں میں یہ ذکر نہیں کہ اس عبادت گاہ کو تیسری بار کون تعمیر کرے گا۔

 


کیا آپ کے خیال میں درج بالا ’پیش گوئیوں‘ کے تحت ’تیشاباؤ‘ سے ایک دو یوم قبل ہیکل سلیمانی میں لومڑیوں کی یلغار کے ساتھ درج بالا پیش گوئی میں درج بین السطور پیغام راسخ العقیدہ یہودیوں اور عیسائیوں دونوں کی نیندیں اڑانے کے لیے کافی نہیں؟

اپنی رائے سے کمینٹس میں ضرور آگاہ کریں (شکریہ) – نیرنگ