Twice Lucky Lottery in India| Read in Urdu

تیرہ کروڑ کی لاٹری جیت کر مزدور کو خزانہ بھی مل گیا

دنیا میں بعض لوگ مادی اعتبار سے شاید بہت خوش نصیب ہوتے ہیں اور یہ بات اس وقت ایک بار پھر سچ ثابت ہوئی جب بھارت میں ایک کسان کو لاٹری میں خطیر رقم جیتنے کے بعد جیتی گئی رقم سے ہی خریدی گئی زرعی زمین سے بیش قیمت سو سال قدیم خزانہ ہاتھ لگ گیا۔

امریکی ٹی وی فوکس نیوز کے مطابق انڈیا کی جنوب مغربی ریاست کیرالہ کے کیلانور نامی قصبے کے رہائشی سابقہ مل مزدور 66 سالہ رتھنا کران پیلائی نے گزشتہ سال کرسمس کے موقع پر لاٹری میں 13 کروڑ کا انعام جیتا تھا مگر مغربی توہم پرستی کے لحاظ سے منحوس تصور کیا جانے والا ’تیرہ‘ کا ہندسہ ان کی تقدیر کے لیے تیرہ (تاریک) نہیں بلکہ خوش قسمتی کی ایک اور کرن ثابت ہوا۔ مقامی ذرائع کے مطابق پیلائی نے جو شروع ہی سے اپنے آپ کو پیدائشی کاشت کار گردانتے تھے لاٹری میں جیتی گئی اس خطیر رقم کے ایک چھوٹے سے حصے سے سبزیوں لگانے کے لیے زرعی زمین کا ایک قطعہ خریدنے کا فیصلہ کیا جو ان کے گھر سے چند میل کی دوری پر ایک قدیم ہندو مندر کے نزدیک تھا۔ ایک روز جب پیلائی اپنی زمین میں ہل چلا رہے تھے تو ان کے ہل کے بلیڈ زمین میں دفن کسی سخت شے سے ٹکرائے۔ متجسس پیلائی نے فوراً اردگرد کی مٹی صاف کی تو یہ دیکھ کر ان کی حیرت کی انتہا نہ رہی کہ وہاں ایک قدیم ہنڈیا دفن تھی اور جب انہوں نے اس کا ڈھکنا ہٹا کر دیکھا تو اندر ہزاروں کی تعداد میں تانبے کے قدیم ترین مگر بیش قیمت سکے بھرے ہوئے تھے جو بعدِازاں وزن کرنے پر تقریباً سوا 18 کلوگرام کے نکلے۔


خیال رہے انڈیا میں تانبہ ویسے بھی کم یابی کے سبب ایک قیمتی دھات ہے مگر تانبے کے ان سکوں کی اصل قیمت ان کی قدامت میں نہاں ہے –  نیرنگ


چوں کہ پیلائی کو بوسیدہ ہنڈیا میں دفن سکے دیکھتے ہی ان کی اصل اہمیت کا اندازہ ہو گیا تھا اس لیے انہوں نے فوری طور پر متعلقہ حکام کو اس بارے میں اطلاع دی۔

فی الوقت بھارتی قانون کے تحت یہ ’خزانہ‘ سرکاری تحویل میں ہے اور اس میں سے اب پیلائی کے ہاتھ کیا لگے گا اس بات کا فیصلہ آنے والا وقت ہی کر سکتا ہے۔